محکمہ وائلڈ لائف اور سول سوسائٹی سنجیدگی سے جنگلی حیات کو بچاہیں۔ساجد کاشر

Share Button

چوکی سما ہنی۔جنگلی حیات کسی ملک یا علاقے کا حسن ہونے کے علاوہ قدرت کا ایک انمول تحفہ بھی ہے جسکی حفاظت کرنا بحثیت انسان ہم پر لازم ہے ان خیالات کا اظہار سماجی کارکن ساجد اقبال کاشر نے اپنے ایک بیان میں کیا انھوں نے کہاکہ آج جنگلی حیات شدید خطرات کا شکار ہے جنگلی حیات کی کمی اور خاتمہ کے خد شات کے اسباب و وجوہات بے شمار ہیں مگر جنگلی حیات کو سب سے زیادہ خطرہ شکاریوں سے ہے جو اپنا شوق پورا

کرنے کے لیے نایاب جنگلی حیات کابے دریغ شکار کر کے ان کی نسل کو ختم کر رہے ہیں جنگلات میں آتش زدگی اور جنگلات میں کمی کی وجہ سے بھی جنگلی حیات متاثر ہوئی ہے ضرو رت اس امر کی ہے کہ محکمہ وائلڈ لائف اور سول سوسائٹی سنجیدگی سے جنگلی حیات کی بقا کے لیے منصوبہ بندی کریں جنگلی حیات چرند پرند ہماری وادی کا حسن ہیں ،جنگلی حیات کو بچانے کے لیے کلہاڑا اور بندوق کو ترک کرنا ہو گا آزاد کشمیر میں اس وقت جنگلی حیات کی بقا اور نایاب جنگلی حیات کی افزائش نسل ایک سنگین مسلے کی صورت اختیار کر چکی ہے جس پر قابو پانے کے لیے سول سوسائٹی کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا سب ڈویژن سماہنی میں تحفظ جنگل و جنگلی حیات کے لیے بلا تفریق علاقہ قبیلہ وپارٹی باشعور اور سنجیدہ افراد پر ایک کمیٹی عنقریب تشکیل دی جا رہی ہے جو حکام بالا سے مل کر اس ورثے کی حٖفاظت کے لیے جاندار کردار ادا کرے گی ۔

Facebook Comments
Share Button

About admin