5ہزار کی آبادی والاعلاقہ گرہون۔ دونوں سکولز کی اپ گریڈیشن کا منتظر

Share Button

رپورٹ ادریس چوہدری
سما ہنی کی یونین کونسل برجاہ جنڈالہ کے مضافاتی گاوں گرہون میں انیس سو تہترمیں قائم ہونے والا گورنمنٹ بوائز مڈل سکول اور انیس سو اڑسٹھ م میں قائم گورنمنٹ گرلزمڈل سکو
ل جن کی حالت زار ناگفتہ بہ رہی ۔۔ ،اپنی مدد آپ کے تحت گورنمنٹ مڈل سکول گرہون کی شاندار عمارت کا قیام عمل میں تو آگیا ، مگرچار عشروں سے سے زائد عرصہ گزر جانے کے باوجود ارباب اختیار کی مسلسل چشم پوشی آج بھی برقرار ہے ۔ محتاط اندازے کے مطابق 5ہزار کی آبادی والاعلاقہ گرہون۔ دونوں سکولز کی اپ گریڈیشن کا منتظر ہے ،طلباء و طالبات کو ہائی سطع کی تعلیم کیلئے سات سے 10کلومیٹر جو کہ دشوار گزار راستوں پر محیط سفر ایک الگ کہانی ہے علاقہ گرہون کی ممتاز سماجی شخصیت چوہدری محمد عبداللہ زید کے خصوصی تعاون سے دونوں سکولوں کی حالت تو قدرے بہتر ہے ،مگر بوائز مڈل سکول میں 3اساتذہ کا تدریسی سٹاف جبکہ گرلز سکول میں پانچ فی میل اساتذہ کا سٹاف طلباء و طالبات کی تدریسی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں ، جو کہ ناکافی ہیں ۔گرہون کی سرکردہ اور معزز شخصیات کا سٹاف و ہائی سکولز کے قیام کا مطالبہ تو اتر کے ساتھ بدستور ہر پبلک فورم میں جاری ہے ۔ جس کی شدت میں مزید اضافہ دیکھنے میں آیا ہے قابل زکر بات تو یہ ہے کہ بوائز مڈل سکول کی عمارت برطانیہ میں مقیم علاقہ کی سرکردہ شخصیت سابق چیرمین مرکز کونسل سما ہنی چوہدری محمدعبداللہ زید کی خصوصی کاوشوں سے 20لاکھ سے زائد کے خطیر فنڈز سے بوائز سکول کے اکلوتے کمرہ کو شاندار عمارت ھینڈ پمپ ،ٹائلٹ اور فرنیچر کی سہولت مہیا کی گئی،جبکہ گرلز سکول میں صحن کی توسیع و فرنیچر فراہمی اور ٹائلٹ بنوانے کی مد میں 6لاکھ کے قریب فنڈ ز عوامی امداد سے ممکن ہوئے ۔ علاقہ کی دیگر معزز سرکردہ شخصیات حاجی عبدلمجید ،چوہدری خادم ،ڈاکٹر عبدل رزاق ،راجہ محمد اقبال ،صوبیدار چوہدری خادم حسین ،پروفیسر عبدلعزیر نجم ،چوہدری محمد نوید خام ،چوہدری محمد ایوب شیخ محمد ریاض ،حاجی فضل الرحمان ،راجہ محمد سرور کے خصوصی تعاون کی بدولت سکول کیلئے 10کنال رقبہ بھی ایوارڈ ہو چکا ہے لیکن حکومت کی طرف سے ابھی تک سکول کیلئے عمارت نہیں دی گئی ہے سکول سٹاف کی قلت سے دو چار ہے گذشتہ 9سالوں سے 3 اساتذہ کے ذریعے نظام چلایا جا رہا ہے جو تدریسی ضرویات کے برعکس ہے مقامی معززین نے دوران گفتگو اس بات کی نشاندہی کرائی کہ بوائز سکول جانے والے راستے میں برساتی نالہ آتا ہے ،تغیانی کہ باعث سکول آنا ناممکن ہو جاتا ہے برساتی نالے پر پلی کا بنایا جانا ضروری بھی ہے     

Facebook Comments
Share Button

About admin